پاؤں کے تلوؤں کی مالش کے فائدے

قدیم ترین چینی طریقہ علاج کے مطابق پاؤں کے نیچے 100کے قریب ایکوپریشر پوائنٹس ہوتے ہیں، جن کو مساج کرنے سے انسانی اعضاء صحت یاب ہوجاتے ہیں،اس کو Foot Reflexogyکہا جاتا ہے، پاؤں کے تلووں پر مساج کرنے سے 100مختلف قسم کی بیماریوں کا علاج بغیر آپریشن اور دوائی کے کیا جا سکتا ہے، اس طریقہ علاج کے حیران کن مثبت نتائج کی وجہ سےاس وقت عموماً پوری دنیا میں پاؤں کی مساج تھراپی سے مختلف بیماریوں کا نہ صرف علاج کیا جارہا ہے بلکہ اس سے اعضاء کو بھی ٹھیک کیا جا رہا ہے۔۔۔ کمر یا جسم کے کسی ایسے حصے میں جو ریڑھ کی ہڈی سے اٹیچ ہو۔۔۔ اگر ان میںدرد ہوجائے تو صحت کے بہت سے سنگین مسائل پیدا ہوجاتے ہیں اور اس سے نجات حاصل کرنے کیلئے انسان ہر طرح کی دوائی اور درد کش ادویات کھانے کے لئے تیار ہوجاتا ہے۔۔۔ان ادویات کا وقتی فائدہ یہ ہوتا ہے کہ ہمیں درد سے تھوڑے عرصے کے لئے نجات مل جاتی ہے لیکن اصل میں یہ ہمارے معدے اور جسم کے دیگر اعضاء کے لئے بہت ہی خطرناک ثابت ہوتی ہیںلیکن آپ کو یہ جان کر حیرت ہوگی کہ پاؤں میں ایک جگہ ایسی ہے جہاں کی رگیں براہ راست ہماری کمر کے ساتھ جڑی ہیں اور اگر اس حصے کی مالش کی جائے تو نہ صرف کمر درد کے عذاب سے چھٹکارا ملتا ہے بلکہ اس کے اور بھی بہت سے فائدے ہیں۔۔۔ماہرین صحت کا ماننا ہے کہ ہمارے پاؤں کی رگیں براہ راست ریڑھ کی ہڈی کے ساتھ جڑی ہوتی ہیں اور اگر ہمارے پاؤں کو سکون ملے تو اس سے کمر کے درد میں کافی راحت ملتی ہے۔۔۔ پاؤں کے مساج اور پاؤں کی ورزشوں کے کئی طریقے ہیںجن سے نہ صرف ہم کمر درد سے آرام پا سکتے ہیں بلکہ جسم کے دیگر حصوں میں درد کیساتھ ساتھ اور کئی بیماریوں سے نجات حاصل سکتے ہیں۔۔۔ اگر آپ کی کمر میں درد ہے اور کافی علاج کے بعد بھی آپ کوآرام نہیں آرہا تو آپ پاؤں کے تلوؤں کی اس طریقے سے مالش کر یں کمر کی پرانی سے پرانی درد چند دن مالش کرنے سے ٹھیک ہو جائے گی۔۔۔ آپ کو بس یہ کرنا ہے کہ دراز ہوکر بیٹھ جانا ہے اوردائیں گھٹنے پر بائیں پاؤں کو رکھیں اور پاؤں کے درمیان جہاں آپ کو رگیں نظر آئیں ان پر مساج کریں اور یہ عمل روزانہ 10سے15منٹ تک کریں،آپ خود محسوس کریں گے کہ بہت تیزی سے کمرکے درد میں کمی واقع ہورہی ہے،آپ چاہیں تو پاؤں کی مالش کے لئے کسی کی خدمات بھی حاصل کرسکتے ہیں۔۔۔اگر روزانہ رات کو سونے سے پہلے پاؤں کا مساج کر لیا جائے تو جسم میں خون کی روانی متاثر نہیں ہوتی آکسیجن جسم کے تمام حصوں تک پہنچ جاتی ہے۔۔۔پاؤں کا مساج پرسکون نیند کے لئے بہت ضروری ہے یہ ذہنی دباؤ، بے خوابی کو دور کر کے دماغ کو پر سکون کر دیتا ہے۔۔۔ اگر جسم کے کسی اور حصے میں درد رہتا ہو یا سارا دن تھکاوٹ اورسستی میںگزرتا ہو تورات کوسوتے وقت پورے پاؤں پر تیل لگائیں خاص طور پر تلوؤں پرتیل لگا کر تین منٹ تک دائیں پاؤں کے تلوے اور تین منٹ بائیں پاؤں کے تلوے پرمالش ضرور کریں ۔۔۔اس طرح مالش کرنا جسمانی طور پر بہت فائدہ مندہو گا اوراس سے آپ کو بہت سی بیماریوں سے نجات حاصل ہو گی ۔۔۔ اگر پاؤں کے انگوٹھے کے کونوں کودبایا جائے اور اس کا مساج کیا جائے تو یہ ہائپو تھیلمس (hypothalamus)کے مریضوں کے لئے بہت اچھا ہے۔۔۔ایسے لوگ جنہیں وزن کا مسئلہ درپیش ہوتو انہیں چاہیے کہ اس جگہ (یعنی پاؤں کے انگوٹھے کو) دبائیں،اسے دبانے سے نہ صرف آپ کی بھوک کنٹرول ہوگی بلکہ آپ کا وزن بھی قدرتی طور پر کم ہوگا۔۔۔اگر انگوٹھے کے درمیان والی جگہ پر مساج کیا جائے تو اس کاپچوٹری گلینڈ پر اچھا اثر پڑتا ہے،اگر آپ اس جگہ کو دبائیں گے تو ہارمونز کے عدم توازن کا مسئلہ ٹھیک ہوجائے گا۔۔۔اگر انگوٹھے کے نیچے والی جگہ کو دبایا جائے تو یہ تھارائیڈ گلینڈ کو ٹھیک کرے گا۔۔۔تھارائیڈ گلینڈ کی کارکردگی میں بہتری آنے سے آپ کے ذہنی تناؤ میں کمی آئے گی،اگر آپ مسلسل تناؤ کا شکار ہیں تو اس جگہ کو ضرور دبائیں۔۔۔پاؤں کی درمیان والی جگہ کے ساتھ بہت سے رگیں جڑی ہوتی ہیں اور اگر اس جگہ کو دبایا جائے تو جسم میں ایک سکون آنے کے ساتھ تناؤ میں کمی آئے گی۔۔۔اگر آپ جسم میں توانائی کی کمی کا شکار ہیں اوراس وجہ سے اکتا چکے ہیں تو پاؤں کے درمیان والی جگہ سے تھوڑا نیچے باہر والی جگہ کو دبائیں اور اپنی کھوئی ہوئی توانائی بحال کریں۔۔۔اگر آپ ایڑھیوں کے درمیان والی جگہ کو دبائیں گے تو یہ جسم سے تمام زہریلے مادوں کو نکالنے میں بہت مدد دے گا،ایسے افراد جو تمباکو نوشی کرتے ہیں انہیں اس جگہ دبانے سے کافی سکون ملتا ہے۔۔۔ اب ہم آپ کو جسم کے درد ٹھیک کرنے کے لئے پاؤں کی چند آسان ورزشیں بتائیں گے۔۔۔آپ اپنے پاؤں کے پنجوں پر زور دیتے ہوئے اس کے اوپر کھڑے ہوں اور تین تک گنتی گنیں، اس عمل کو 10بار دہرائیں ،اس طریقے سے آپ کے جسم میں چستی برقرار رہے گی اور جسم کا توازن بھی کافی بہتر ہوگا۔۔۔ آپ اپنے پاؤں کے پنجوں کے بل چلیں،اس طرح 15سیکنڈ چلیں اور 10سیکنڈ کا آرام دینے کے بعد دوبارہ اس عمل کو دہرائیںاس سے آپ کی پنڈلیوں اور پاؤں کی ورزش ہوگی اور دردمیں خاطر خواہ کمی ہوگی۔۔۔اپنی کمر کے بل زمین پر لیٹ جائیں اور اپنی ٹانگوں کو زیادہ سے زیادہ اوپر اٹھائیں اور اب ایک پاؤں کو دوسرے کے اوپر رکھیں اور دس تک گنیں،اب دوسرے پاؤں کے ساتھ بھی یہی عمل دہرائیں۔۔۔ایک پینسل یا پین کو اپنے پاؤں کے پنجے کے ساتھ اٹھائیں اور 15سے20 سیکنڈ تک پنجوں میں پکڑیں اور اب دوسرے پاؤں کے ساتھ یہی عمل دہرائیں۔۔۔جیسے پاؤں کی مالش اور ورزش سے جسمانی دردیں ٹھیک ہوتی ہیں۔۔۔ اسی طرح ہمارے جسم میںجو زہریلے مادے پیدا ہوتے ہیں وہ مادے پاؤں پرdetoxification patches(سم ربائی پیچ) لگانے سے مر جاتے ہیں۔۔۔ ہمارے جسم میں وقت کے ساتھ ساتھ زہریلے مادے اکٹھے ہوتے رہتے ہیں اور ان سے نجات ضروری ہوتی ہے۔۔۔جسم سے زہریلے مادے نکالنے کے لئے Detoxification patches (سم ربائی پیچ)کا استعمال کیا جاتا ہے جو کہ جسم کے مختلف حصوں بالخصوص پاؤں میں لگائے جاتے ہیں،اس کے استعمال سے مدافعتی نظام مضبوط ہوتا ہے اور ساتھ ہی یہ جسم کو تروتازہ رکھتا ہے، چونکہ یہ پیچز کافی مہنگے ہوتے ہیں لہذا لوگ ان کا استعمال کرتے ہوئے گھبراتے ہیںلیکن آج ہم آپ کو یہ پیچز گھر پر بنانے کا آسان اور سستا طریقہ بتائیں گے۔۔۔ایک ایلومینیم فوائل لے کر 10x6cmکا ٹکڑا کاٹ لیں،اب مختلف ہربل اشیا جیسے ہلدی،سبز چائے،چنبیلی،چیلی پاؤڈر اور وٹامن سی پاؤڈر کو مکس کرلیں،ان تمام اجزاءکو اچھی طرح باریک کرلیں اور فوائل میں ڈال دیں،اس کے بعد انہیں روئی یا کپڑے پر ڈال کر پاؤں سے باند ھ دیں اور ساری رات لگا رہنے دیں۔
اب کچھ لوگوں کا احوال بتاتے ہیںجن کو کافی عرصے سے مختلف جسمانی تکالیف تھی مگر پاؤں کی مالش اور خصوصا پاؤں کے تلووں کی مالش کرنے سے تمام تکالیف سے چھٹکارا مل گیا۔
ایک خاتون نے کہتی ہیں کہ میرے نانا 87سال کے فوت ہوئے، نہ کمر جھکی، نہ جوڑوں میں درد، نہ سر درد، نہ دانت ختم ، خاتون نے کہا کہ ایک بار باتوں باتوں میں نانا جی بتانے لگے کہ جب میں کلکتہ میں ریلوے لائن پر پتھر ڈالنے کی نوکری کر رہا تھا تومجھے ایک سیانے نے مشورہ دیا تھا کہ سوتے وقت اپنے پاؤں کے تلوؤں پر تیل لگا لیا کریں بس یہی عمل میری شفاء اور فٹنس کا ذریعہ ہے۔
ایک سٹوڈنٹ نے بتایا کہ میری والدہ اسی طرح تیل لگانے کی تاکید کرتی ہیں اور بتاتی تھیں کہ بچپن میں میری نظر کمزور ہو گئی تھی جب پاؤں پر تیل لگانے کا عمل مسلسل کیا تو میری نظر آہستہ آہستہ بالکل مکمل اور صحت مند ہو گئی۔
ایک صاحب جو کہ تاجر ہیں انہوںنے لکھا میں چترال میں سیرو تفریح کرنے گیا ہوا تھا وہاں ایک ہوٹل میں سویا مجھے نیند نہیں آ رہی تھی میں نے باہر گھومنا شروع کر دیا میں باہر بیٹھا تھا اور رات کا وقت تھا، بوڑھا چوکیدار مجھے کہنے لگاکیا بات ہے ؟ میں نے کہا نیند نہیں آ رہی ،وہ مسکرا کر کہنے لگا آپ کےپاس کوئی تیل ہے میں نے کہا نہیں وہ گیا اور تیل لایا اور کہا اپنے پاؤں کے تلوؤں پر چند منٹ مالش کریں بس پھر کیا تھا تھوڑی دیر میں ہی میں خراٹے لینے لگا اب میں نے معمول بنا لیا ہے۔
ایک بہن نے کہتی ہیں کہ میرے پاؤں میں ہمیشہ سوزش رہتی تھی جب چلتی تھی تو تھکن سے چور ہو جاتی تھی میں نے رات کو سونے سے پہلے روزانہ پاؤں کے تلوؤں پر زیتون کے تیل سے2منٹ کی مالش کرنا شروع کر دی اس عمل سے میرے پاؤں کا درد ختم ہو گیا ۔۔۔ میں یہ ٹوٹکہ تقریباً پچھلے 15سال سے کر رہی ہوں مجھے اس سے بہت پر سکون نیند آتی ہے میں اپنے چھوٹے بچوں کے پاؤں کے تلوؤں پر بھی تیل سے مالش کرتی ہوں اس سے وہ بہت خوش ہوتے ہیں اور صحت مند رہتے ہیں ۔۔۔ زبردست کمال کی چیز ہے،یہ ٹوٹکہ پر سکون نیند کیلئے نیند کی گولیوں سے بہتر کام کرتا ہے ، میں اب روزانہ رات کو پاؤں کے تلوؤں پر تیل کی مالش کر کے سوتی ہوں۔
ایک اور خاتون کہتی ہیں میں تھائیرائیڈ کی مریضہ تھی میرے ٹانگوں میں ہر وقت درد رہتا تھا اور میرے پاؤں سن رہتے تھے پچھلے سال مجھے کسی نے رات کو سونے سے پہلے پاؤں کے تلوؤں پر تیل کی مالش کا یہ ٹوٹکہ بتایا میں مستقل کر رہی ہوں اب میں عموماً پر سکون رہتی ہوں ۔
ایک پروفیسر صاحب کہتے ہیں کہ بارہ تیرہ سال پہلے مجھے بواسیر تھی ، میرا دوست مجھے ایک حکیم صاحب کے پاس لے گیا جن کی عمر 90سال تھی انہوں نے مجھے دوا کے ساتھ ساتھ رات کو سونے سے پہلے پاؤں کے تلوؤں پر انگلیوں کے درمیان ، ناخنوں پر اور اسی طرح ہاتھوں کی ہتھیلیوں ، انگلیوں ، کے درمیان اور ناخنوں پر تیل کی مالش کرنے کا مشورہ دیا اور کہا ناف میں چار پانچ قطرے تیل کے ڈال کر سونا ہے میں نے حکیم صاحب کے اس مشورے پر عمل کرنا شروع کر دیا اس سے میرے خونی بواسیر میں کافی حد تک آرام آ گیا اس ٹوٹکے سے میرا قبض کا مسئلہ بھی حل ہو گیا میرے جسم کی تھکاوٹ بھی دور ہو جاتی ہے اور پر سکون نیند آتی ہے اور بقول حضرت حکیم صاحب دامت برکاتہم کے ناک کے اندر سرسوں کا تیل لگا کر سونے سے خراٹے آنے بند ہو جاتے ہیں ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here